39

کراچی،قومی ایئرلائن کا مسافر طیارہ گر کر تباہ،بدقسمت طیارے میں100سے زائدافراد موجود تھے

کراچی(سی این پی)لاہور سے کراچی آنے والا قومی ایئرلائن کا مسافر طیارہ لائینڈنگ سے قبل کراچی ایئرپورٹ کے قریب گر کر تباہ ہوگیا ، طیارہ گرنے پرسول ایوی ایشن کی جانب سے کراچی ایئرپورٹ پرایمرجنسی نافذ کردی ہے۔تفصیلات کے مطابق کراچی ایئرپورٹ کےقریب جناح گارڈن میں پی آئی اے کا طیارہ گر کر تباہ ہوگیا، بدقسمت طیارہ لاہور سے کراچی آرہا تھا، طیارہ گرنے پر سول ایوی ایشن کی جانب سے ایمرجنسی نافذ کردی جبکہ سول ایوی ایشن ، ریسکیو اور پولیس کی ٹیمیں طیارہ گرنے کی جگہ پہنچنا شروع ہوگئی ہے۔طیارہ زمین سے ٹکراتے ہی ہولناک آگ لگ گئی اور پورے علاقے میں دھواں پھیل گیا ہے، طیارہ آبادی میں گرنے سے گھروں کو نقصان پہنچا اور گاڑیوں بھی تباہ ہوگئی۔تفصیلات کے مطابق پی آئی اے کاطیارہ ایئربس320 میں 100سے زائد مسافر موجود تھے ، کپتان نے کنٹرول ٹاورکوطیارےکےلینڈنگ گیئرمیں خرابی کی اطلاع دی اورجسکے بعدکپتان سے دوبارہ رابطہ نہ ہوسکا۔ذرائع کےمطابق سول ایوی ایشن نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ پی آئی اے کی پرواز 8303 کا لینڈنگ سے ایک منٹ قبل کا ائیرٹریفک کنٹرول سے رابطہ منقطع ہوگیا تھا۔ سول ایوی ایشن کا کہنا ہےکہ طیارے میں فنی خرابی پیدا ہوئی تھی اور لینڈنگ سے پہلے اس کے پہیے نہیں کھل رہے تھے جس پر پرواز کو راؤنڈ اپ کا کہا گیا لیکن اس دوران جہاز آبادی پر گر گیا۔پی آئی اے نے حادثے کا شکار طیاروں کے مسافروں کی فہرست جاری کردی ہے جس کے مطابق مسافروں میں 51 مرد ،31 خواتین اور 9 بچے شامل ہیں۔طیارے میں سینئر صحافی انصار نقوی بھی سوار تھے۔ذرائع کے مطابق طیارے کے کپتان کا نام سجاد گل ہے جب کہ عملے میں عثمان اعظم ، فرید احمد، عبدالقیوم اشرف ، ملک عرفان رفیق، عاصمہ اور مدیحہ ارم شامل ہیں۔طیارہ گرنے کے باعث گھروں میں موجود لوگوں کے بھی زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں، متاثرہ گھر وں سےزخمیوں کو نکالا جارہا ہے۔ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ابتدائی اطلاعات کےمطابق طیارے میں 102افرادسوارتھے، وزیراعلیٰ سندھ نے آئی جی پی اور کمشنر کراچی کو ہدایت کی ہے کہ وہ حادثے کی جگہ پر ہر ممکن امدادی کاموں کو یقینی بنائے۔دوسری جانب ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ آرمی کوئیک رسپارنس فورس،رینجرز طیارہ گرنےکی جگہ پہنچ گئے، پاک فوج،رینجرز ،سول انتظامیہ ریلیف آپریشن میں مصروف ہیں۔وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے طیارہ گرنے پر دکھ کا اظہارکرتے ہوئے کمشنر کراچی اورڈی آئی جی کو فون کرکے علاقے میں فوری پہنچنے کےاحکامات جاری کردیئے گئے ہیں۔وزیراعلیٰ سندھ نےحادثےمیں متاثرہ لوگوں کی فوری مددکرنےکی ہدایت کرتے ہوئے تمام اسپتالوں میں ایمرجنسی نافذکردی اور کہا اسپتالوں میں فوری طورپربلڈکابندوبست کیا جائے اور فوری سینئر ڈاکٹرزکوڈیوٹی پر پہنچیں، مجھے پل پل کی رپورٹ دی جائے۔گورنرسندھ عمران اسماعیل نے پی آئی اے کا طیارہ گرنے پر اظہار افسوس کرتے ہوئے چیئرمین این ڈی ایم اے کو جائے حادثہ پر امدادی کارروائی کی ہدایت کردی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں