24

لنک روڈزیادتی کیس،مرکزی ملزم عابد کی گرفتاری کیلئے ریپڈ رسپانس فورس تشکیل

لاہور(سی این پی) لنک روڈزیادتی کیس میں آئی جی پنجاب نے ملزم کی گرفتاری کے لئے ریپڈرسپانس فورس تشکیل دے دی ، ٹیمیں ملزم کے حوالے سے معلومات ڈی آئی جی انویسٹی گیشن کو رپورٹ کریں گے۔تفصیلات کے مطابق لاہور لنک روڈ خاتون زیادتی کیس کو تیرہ روز گزر گئے لیکن کوئی پیش رفت نہ ہو سکی اور مرکزی ملزم عابد علی پولیس کی گرفت میں نہ آسکا۔آئی جی پنجاب انعام غنی نے ملزم کی گرفتاری کے لئے ریپڈ رسپانس فورس تشکیل دے دی ہے، ہر ضلع میں ایک گاڑی، ایک اے ایس آئی انچارچ اور 4 اہلکار 24 گھنٹے ڈیوٹی دیں گے اور ٹیمیں ملزم کے حوالے سے معلومات ڈی آئی جی انویسٹی گیشن کو رپورٹ کریں گی۔گذشتہ روز پنجاب پولیس نے عابد علی کی گرفتاری کے لیے پمفلٹ تیار کیا تھا ، پمفلٹ میں گرفتاری میں مدد دینے والوں کیلئے 25 لاکھ کا انعام بھی درج تھا جبکہ عابد علی کے 2 متوقع حلیہ جات کی تصاویر پمفلٹ پر لگا ئی اور گرفتاری کی اطلاع کے لیے 2 موبائل نمبرز بھی جاری کئے تھے، ایس پی سی آئی اے لاہورعاصم افتخار اور ڈی ایس پی حسنین حیدر کے نمبردرج ہے۔دوسری جانب ملزم کی گرفتاری سے آگاہی کی ویڈیو جاری کی گئی تھی، مراسلے میں کہا گیا تھا کہ ملزم درباروں،مزاروں ،مساجد ،امام بارگاہوں میں روپوش ہوسکتاہے، ملزم کوعرس،سرکس سمیت دیگر عوامی مقامات پرتلاش کیاجائے۔مراسلے کے مطابق ڈسٹرکٹ سکیورٹی برانچز ملزم کی گرفتاری کے لیے خصوصی نظر رکھے اور ملزم کے حوالے سے ویڈیوکلپ کیبلز پر بھی نشر کی جائے۔آئی جی پنجاب انعام غنی نے کہا تھا کہ ملزم کوگرفتارکرانیوالے کی شناخت راز میں رکھی جائیگی، گرفتاری میں مددکرنیوالوں کو انعامی رقم دی جائے گی۔خیال رہے گرفتار شفقت علی اور دیگر ملزمان عابد کی بیوی،سالی دوقریبی عزیز،عابد کاساتھی بالامستری ،وقارالحسن سے تفتیش جاری ہے جبکہ شفقت اعتراف جرم بھی کرچکا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں