مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں انتہا تک پہنچ چکیں، ترجمان دفترخارجہ

اسلام آباد(سی این پی)ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹرمحمد فیصل کا کہنا ہے کہ پاکستان نے کشمیر کی صورت حال پرتوجہ کے لیے متعدد اقدامات کیے۔تفصیلات کے مطابق ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کا کہنا ہے کہ مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں انتہا تک پہنچ چکیں۔ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ انسانی حقوق کونسل میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں توجہ کا مرکز ہے، پاکستان نے کشمیرکی صورت حال پرتوجہ کے لیے متعدد اقدامات کیے۔ترجمان دفترخارجہ نے کہا کہ پاکستان انسانی حقوق خلاف ورزیاں بند کرانے کیاقدامات کرے گا، انسانی حقوق کونسل کے تحت کشمیریوں کی اذیت ختم کرانے پرکوشاں ہیں۔واضح رہے کہ مقبوضہ کشمیر میں آج مسلسل 47ویں روز بھی کرفیو برقرار ہے اور مواصلات کا نظام مکمل پر معطل ہے، قابض انتظامیہ نے ٹیلی فون سروس بند کررکھی ہے جبکہ ذرائع ابلاغ پرسخت پابندیاں عائد ہیں۔میڈیا کے مطابق مواصلاتی نظام کی معطلی، مسلسل کرفیو اور سخت پابندیوں کے باعث لوگوں کو بچوں کے لیے دودھ، زندگی بچانے والی ادویات اور دیگر اشیائے ضروریہ کی شدید قلت کا سامنا ہے۔میڈیا کے مطابق وادی میں کرفیو کے باعث 3 ہزار 9 سو کروڑ کا نقصان ہو چکا ہے، وادی میں کھانا میسر ہے اور نہ ہی دوائیں۔ سرینگر اسپتال انتظامیہ کے مطابق کرفیو کے باعث روزانہ 6 مریض لقمہ اجل بن جاتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں