سی ایس ایس رولز میں تبدیلی حکومتی منظوری کے بغیر ہوئی،رپورٹ

اسلام آباد(سی این پی)ایف آئی اے نے تصدیق کی ہے کہ سی ایس ایس رولز میں تبدیلی وفاقی حکومت کی منظوری کے بغیرہوئی، رولز تبدیلی کے بعد اختیاری مضامین میں 33 اور مجموعی طور پر 50 فیصد نمبر لینا لازمی ہوگیا ہے۔ایف آئی اے دستاویز کے مطابق فیڈرل پبلک سروس کمیشن نے سال 2013 میں حکومتی منظوری کے بغیر سی ایس ایس امتحان پاس کرنے کے رولز میں تبدیلی کی۔ رولز میں تبدیلی کے بعد پاس ہونے والوں کی شرح میں حیرت انگیز کمی ہوئی ہے جس کے باعث چھوٹے صوبوں کی درجنوں نشستیں خالی رہ گئیں۔سی ایس ایس کا امتحان اب اردو زبان میں بھی لیا جاسکے گا۔رپورٹ کے مطابق رولز تبدیلی کے بعد اختیاری مضامین میں 33 اور مجموعی طور پر50 فیصد نمبر لینا لازمی ہوگیا۔ رولز کی تبدیلی کے وقت تعینات اسٹنٹ ڈائریکٹرعقیل محمد کا بیان بھی رپورٹ میں شامل نہیں کیا گیا۔ ایف آئی اے نے ذمہ داروں کیخلاف کاروائی کا معاملہ ایف پی ایس پر ڈال دیا۔سینیٹ سیکرٹریٹ نے ایف آئی اے کو سی ایس ایس رولز میں تبدیلی کی تحقیقات کا حکم دیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں