ایران کا حراست میں لے لیے گئے برطانوی ٹینکر کو چھوڑنے کا اعلان

تہران(سی این پی) سویڈش نشریاتی ادارے نے کہا ہے کہ ہم جہازجلد کو نکالنے میں کامیاب ہوجائیں گے لیکن ہم واقعات کی کوئی پیش گوئی نہیں کرنا چاہتے ہیں۔تفصیلات کے مطابق ایران کے میری ٹائم حکام نے کہاہے کہ برطانیہ کے پرچم بردار ٹینکر اسٹینا امپرو کو بہت جلد چھوڑ دیا جائے گا، ایران کی سپاہِ پاسداران انقلاب نے انیس جولائی کو اس ٹینکر کو پکڑ لیا تھا اور تب سے اسے یرغمال بنا رکھا تھا۔قبل ازیں اسٹینا امپرو کی مالک سویڈش فرم کے چیف ایگزیکٹو ایرک ہینل نے بتایا تھا کہ انھیں جہاز کو چھوڑنے کی اطلاع دی گئی ہے اس لیے ہم سمجھتے ہیں کہ جہاز کو چھوڑنے کے لیے سیاسی فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ہینل نے سویڈش نشریاتی ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم امید کرتے ہیں کہ ہم جہازجلد کو نکالنے میں کامیاب ہوجائیں گے لیکن ہم واقعات کی کوئی پیش گوئی نہیں کرنا چاہتے ہیں۔ہم یہ دیکھنا چاہتے ہیں کہ یہ جہاز ایرانی پانیوں سے تیرتا ہوا باہر آجائے۔ایران کی نیم سرکاری خبررساں ایجنسی نے حکام کے حوالے سے اس اطلاع کی تصدیق اور کہا کہ اس کو بہت جلد چھوڑ دیا جائے گا لیکن اس کا حقیقی وقت نہیں بتایا کہ اس کو کب برطانوی حکام کے حوالے کیا جائے گا۔پاسداران انقلاب نے اسٹینا امپرو کو آبنائے ہرمز کے نزدیک جہاز رانی کی خلاف ورزیوں کے الزام میں قبضے میں لیا تھا لیکن انھوں نے یہ کارروائی جبل الطارق میں اس سے دو ہفتے قبل ایک ایرانی تیل بردار جہاز کو پکڑنے کے ردعمل میں کی تھی۔میڈیا رپورٹس کے مطابق برطانوی حکام نے اگست میں اس جہاز کو چھوڑ دیا تھا۔یادرہے کہ ایران نے چار ستمبر کو اس برطانوی جہاز کے عملہ کے تیئیس میں سے سات ارکان کو رہا کردیا تھا۔سویڈش وزیر خارجہ مارگوٹ وال اسٹروم نے تب کہا تھا کہ اس جہاز کو پکڑنے کے بعد سے سویڈن ایران کے ساتھ اعلی سیاسی سطح پر رابطے میں ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں