پاکستان اور بھارت کو مل کر کام کرنا چاہیے، ٹرمپ

واشنگٹن(سی این پی)امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے رہنمائوں سے بات کی ہے اورانہیں بتایا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان مسئلہ کشمیر پرثالثی کروانے کیلئے تیار ہوں۔وزیراعظم عمران خان اور بھارتی وزیراعظم نریندرا مودی امریکہ کے دورے پر ہیں۔ امریکی صدر نے گزشتہ روز وائٹ ہائوس میں ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ دونوں سربراہوں سے بہت مثبت باتیں ہوئی ہیں۔ ۔ٹرمپ کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک ایٹمی طاقت ہیں، اس لیے اختلافات ختم کرکے مل کرکام کرنا ہوگا۔امریکی صدر کے مطابق کشمیر کے معاملے پر جو بن سکے کرنے کو تیار ہوں۔ دونوں سربراہان میرے دوست ہیں اور انہیں مسائل کے حل کیلئے مل کر کام کرنا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ حالات بہت سنگین ہیں مگربہتری کی امید ہے۔یاد رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ اس سے پہلے بھی دونوں ممالک کے درمیان مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے بطور ثالث کردار ادا کرنے کی پیشکش کر چکے ہیں۔ٹرمپ نے گزشتہ ماہ عمران خان اور نریندر مودی سے خطے میں حالیہ کشیدگی کم کرنے کیلئے ٹیلیفونک گفتگو کی تھی اور کہا تھا کہ دونوں ممالک کے درمیان طویل عرصے سے خراب تعلقات خطرناک صورت حال ہے۔دوسری جانب نیو یارک ٹائمز کو دیے جانے والے انٹرویو میں عمران خان کا کہنا ہے کہ بعض ممالک بھارت کے ساتھ اپنے مفادات کی وجہ سے مسئلہ کشمیر پر زیادہ بات نہیں کرنا چاہتے۔ اقوامِ متحدہ کو مداخلت کرنی چاہیے۔عمران خان نے کہا کہ عالمی برادری کشمیریوں کی حالات پر بے حسی دکھا رہی ہے۔ جنرل اسمبلی سے خطاب میں مقبوضہ کشمیر میں مداخلت کرنے کا مطالبہ کروں گا۔ بھارتی غیر ذمہ داری سے اس کے اپنے مفادات کو نقصان پہنچے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں