جامعہ پنجاب میں طلبا تنظیم اور سیکیورٹی اہلکاروں کے درمیان جھگڑا

طلبا تنظیم کی بغیر اجازت ریلی نکالنے کی کوشش،پنجاب یونیورسٹی میں طلبا تنظیم اور سیکیورٹی اہلکاروں کے درمیان ہاتھا ہائی ہوئی۔طلبا کی ایک تنظیم کے کارکنان آڈیٹوریم کے سامنے مظاہرہ کر رہے تھے کہ انتظامیہ کی جانب سے منع کرنے پر طلبا سیکیورٹی اہلکاروں سے الجھ پڑے۔گزشتہ روز دو طلبا تنظیموں میں پارکنگ کے معاملے پر تصادم ہوا تھا جس میں 4 طلبا زخمی ہوگئے تھے۔ واقعے کے بعد انتظامیہ نے دونوں تنظیموں کے رہنمائوں کیخلاف مقدمہ درج کرایا تھا۔26 ستمبر کو ہونے والے مظاہرے کے دوران طلبا ایف آئی آر کی واپسی کا مطالبہ کر رہے تھے جس کے بعد سیکیورٹی گارڈز سے طلباء کی ہاتھا پائی ہوئی۔یونیورسٹی انتظامیہ نے معاملے پر قابو پانے کیلئے پولیس کو طلب کرلیا۔ترجمان پنجاب یونیورسٹی خرم شہزاد کا کہنا تھا کہ یونیورسٹی میں دھرنے یا احتجاج کی اجازت نہیں جب کہ طلبا تنظیم نے بغیر اجازت ریلی نکالنے کی کوشش کی۔ انہوں نے کہا کہ جامعہ نے اپنی رِٹ قائم کرنے کیلئے احتجاج کو روکا۔ترجمان نے اس قسم کے واقعات کو جامعہ پنجاب کی بڑھتی ہوئی مقبولیت کیخلاف سازش قرار دیتے ہوئے کہا کہ کچھ طلبا ایسی صورتحال پیدا کر دیتے ہیں جس پر انتظامیہ فوری طور پر روک تھام کی کوشش کرتی ہے۔انہوں نے کہا کہ جامعہ میں 47 ہزار سے زائد طلبا ہیں اور ان میں سے کچھ اگر کبھی کوئی گڑبڑ کرتے بھی ہیں تو اس سے تدریسی عمل متاثر نہیں ہوتا۔ آج بھی تمام کلاسز معمول کے مطابق ہوئیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں