نئی دہلی،ہندو انتہا پسندوں نے سکھ نوجوان کو مسلم سمجھ کر مار ڈالا

نئی دہلی(سی این پی)نئی دہلی کے نواحی علاقے موج پور میں انتہا پسند ہندوئوں نے سکھ نوجوان کو مسلم سمجھ کر بہیمانہ تشدد سے ہلاک کر دیا۔
23سالہ ساحل سنگھ کو انتہا پسندوں نے اس وقت بدترین تشدد کا نشانہ بنایا جب وہ کھیل کر دوستوں کے ہمراہ گھر واپس آ رہا تھا۔ دوستوں نے بتایا کہ بپھرے ہندو نوجوانوں نے ساحل کو مسلمان سمجھ کر پہلے گالیاں دیں اور پھر تشدد کرنا شروع کر دیا، بتانے کے باوجود انہوں نے ایک نہ سنی اور ساحل کو قتل کر دیا۔نوجوان کی والدہ سنگیتا نے بتایا کہ پولیس والے تو اس کیس کو کوئی اہمیت نہیں دے رہے، مقامی اثرورسوخ والے ہندوئوں کے دبائو پر ابھی تک پرچہ بھی درج نہیں کیا جا رہا۔ یہ واقعہ 27 ستمبر کو پیش آیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں