اسلام آباد کا علاقہ تمہ موریاں میدان جنگ بن گیا،مقامی لوگوں اور پولیس میں تصادم،متعدد افراد زخمی

اسلام آباد (سی این پی )وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے علاقے موضع تمہ موریاں کے مقامی افراد نے پولیس اہلکاروں اور انتظامیہ پر پتھراؤ کیا اور فائر نگ بھی کی جس کے نتیجے میں پولیس اور انتظامیہ کے متعدد افراد زخمی ہو گئے۔تفصیلات کے مطابق تمہ موریاں کے رہائشیوں کی جانب سے پتھراؤ اور اندھا دھند فائرنگ اس وقت کی گئی جب تمہ موریاں کیس میں علاقے سے غیر قانونی قبضہ واگزار کرانے کے عدالتی احکامات پہ علمدرآمد کروانے کیلئے اسلام آباد پولیس اور انتظامیہ کے اہلکار وہاں پہنچےجس کے نتیجے میں موقع پہ موجود ہاؤسنگ فاؤنڈیشن کے ذمہ داران اور انتظامیہ کے افسران و اہلکار اور شہری رخمی ہوئے۔جبکہ پولیس کی جوابی کارروائی میں مقامی افراد بھی زخمی ہوئے۔

پولیس کے مطابق فائرنگ سیمی مشین گنوں اور دیگر جدید خودکار ہتھیاروں سے کی گئی ۔پولیس کا کہنا ہے کہ ڈپٹی کمشنر، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل اور ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ہیڈ کوارٹرز کے علاوہ دیگر انتظامی عہدیداران اور پولیس کی نفری کے ساتھ ساتھ ہاؤسنگ فاؤنڈیشن کے ذمہ داران بھی موقع پر موجود تھے۔جبکہ پولیس کی جانب سے امن عامہ کی صورتحال اور جانی نقصان کے احتمال کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے قبضے کیخلاف آپریشن عارضی طور پر ملتوی کر دیا گیا.

۔دوسری جانب فائرنگ میں ملوث افراد کے خلاف متعلقہ تھانہ میں دہشتگردی کی دفعات کے تحت ایف آئی آر کے لیے درخواست دے دی گئی۔واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے احکامات پر ہائوسنگ فاؤنڈیشن اور سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کیلئے موضع تمہ موریاں کی 9ہزار کنال زمین کا نوٹیفکیشن اسلام آباد لینڈ ڈائریکٹوریٹ کو جاری کیا گیا تھا۔مذکورہ مختص کردہ جگہ موض تمہ اور موضع موریاں کے قریب سی ڈی اے کے پارک انکلیو کے عقب میں واقع ہے جس کا راستہ پارک انکلیو سے نکلتا ہے۔دوسری جانب مقامی افراد کا کہنا ہے کہ سستے داموں زبردستی زمین لی جا رہی ہے۔مقامی افراد کا مؤقف ہے کہ ہاوسنگ سوسائٹی بنانے کیلئے ان کی زمینوں پر زبردستی قبضہ کیا جا رہا ہے۔جو کہ سراسر زیادتی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں