یورپی پارلیمنٹ نے بھارت سے مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کےفوری خاتمے کا مطالبہ کر دیا

برسلز(سی این پی) یورپی پارلیمنٹ نے مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی مظالم کو بھانپتے ہوئے مودی سرکار سے وادی نافذ کرفیو فی الفور اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے۔تفصیلات کے مطابق یورپی پارلیمنٹ کی بین الاقوامی امور کی کمیٹی نے بھارتی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں کرفیو فوری طور پر اٹھایا جائے کیونکہ اس سے مقبوضہ وادی میں انسانی بحران پیدا ہوگیا ہے۔یورپی پارلیمنٹ نے مقبوضہ وادی میں جاری لاک ڈاون تمام مواصلاتی ذرائع کی معطلی اور ذرائع ابلاغ پر عائد پابندیوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے بھارت پر شدید تنقید کی اور کہا کہ ہم مودی حکومت کی ظالمانہ کارروائیوں کی مذمت کرتے ہیں جن سے مقبوضہ کشمیر میں معمولات زندگی مفلوج ہو کر رہ گئے ہیں۔یورپی پارلیمنٹ کے ارکان نے مظلوم کشمیر کیلئے آواز اٹھاتے ہوئے بھارت سے پاکستان کے ساتھ مذاکرات شروع کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔انہوں نے کہا کہ یورپی یونین اور یورپی پارلیمنٹ کومقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر اپنا ردعمل دیتے ہوئے فوری طور پر جاری کرنا چاہئے۔اس سے قبل مسئلہ کشمیر پر یورپی پارلیمان میں ان کیمرا بریفنگ میں برطانوی مندوب فل بینئن نے بھارت پر مذاکرات کے لیے زور دینے کی تجویز پیش کی تھی ۔یورپی پارلیمنٹ کے 70 رکنی اجلاس کے اکثر ارکان نے تجویز کی حمایت کی تھی ، فل بینئن نے اس موقع پر کہا تھا کہ معاملہ دو طرفہ قرار دے کر ختم نہیں کیا جا سکتا، بھارت کو مذاکرات کی میز پر لانے کے لیے دبائو ڈالنا ہوگا۔فل بینئن نے یہ بھی کہا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی ختم کرانا ہوگی، سیاسی قیدی رہا کرانا ہوں گے اور کرفیو ختم کرنا ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں