مولانا مودودی رحمتہ اللہ علیہ نے انقلاب بذریعہ تعلیم کا تصور پیش کیا، ڈاکٹر حمیرا طارق

اسلام آباد (سی این پی )تعلیم، ترقی کی شاہ کلید ہے اسی لئے تعلیم کے میدان میں جماعت اسلامی نے ابتداء ہی سے مختلف النوع عنوانات سے اپنی جدو جہد جاری رکھی ہے۔ کسی بھی مسلم یونیورسٹی نے جدید علوم و نظریات کا تنقیدی جائزہ نہیں لیا ہمارا کام جدید تعلیم کے اٹھائے ہوئے شکوک و شبہات کا جواب دینا ہے۔ مولانا مودودی رحمتہ اللہ علیہ نے انقلاب بذریعہ تعلیم کا تصور پیش کیا۔ان خیالات کا اظہار سیکریٹری جنرل حلقہ خواتین جماعت اسلامی پاکستان ڈاکٹر حمیرا طارق نے شعبہ تعلیم کے تحت منعقد کئے گئے ایک پروگرام میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ ایک اسلامی مملکت کے تعلیمی اداروں سے فارغ التحصیل طلباء کو رنگ و نسل اور قومیت سے بالاتر ہونا چاہیئے ۔ نظام تعلیم کی تشکیل کے حوالے سے آئین کے آرٹیکل 31 کے تحت تعلیمی نظام کے جملہ مسائل پر آواز اٹھانا ہمارا ائینی حق ہے۔ انہوں نے مذید کہا کہ جماعت اسلامی کے شعبہ تعلیم کے مقاصد میں تعلیمی اداروں میں سنت نبوی ﷺ کی روشنی میں صحت مند ماحول اور تعمیرِ کردار کا فروغ اور جدید و بامقصد تعلیم کے ذریعے ترقی یافتہ اور تعلیم یافتہ معاشرے کا قیام ہے۔اس موقع پر ڈپٹی سیکریٹری جنرلز ثمینہ سعید اور طیبہ عاطف بھی موجود تھیں

اپنا تبصرہ بھیجیں