حکومت بدلی مگر نظام نہ بدلا ،کے پی پولیس نے سی ای او عطاری بلڈز کو واہ سے گرفتار کیا

ایبٹ آباد (سی این پی )حکومت بدلی مگر نظام نہ بدلا، کے پی پولیس نے بغیر وارنٹ گرفتاری معروف بلڈر کی جھوٹے میں گرفتاری کا معاملہ ۔ بلا ل نامی نوسر باز نے پلازہ کی رقم ہڑپ کر نے کے لیے عبدالباسط کے ذریعے جھگڑا کی جھوٹی ایف آ ئی آ ر درج کرا دی ۔تفصیلات کے مطابق ترجمان عطاری بلڈر شاہدین عطاری نے میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ میڈیااور سوشل میڈیا پر عطاری بلڈرکے سی ای او سیف الرحمان خان کے حوالے سے بے بنیاد خبریں چل رہی ہیں۔سیف الرحمن خان کو انکی رہائش گاہ نیوسٹی فیز 2سے کے پی پولیس نے بغیر ورانٹ گرفتاری قانون کی دھجیاں بکھیرتے ہوئے گرفتار کیا اور گرفتاری کے بعد بے بنیاد اور جھوٹا مقدمہ درج کیا ۔ان کا کہنا تھا کہ انہوں نے گرفتاری کی سی سی ٹی فوٹیج آئی جی خیبر پختونخوا کو دے دی ہے جس پر آئی جی کے پی ڈاکٹر محمد نعیم خان نے ایس پی ہیڈ کوارٹر عمر حیات کو عطاری بلڈرز کے سی ای او کے خلاف جھوٹے مقدمہ کی انکوائری کی ہدایت کر دی۔ عطاری بلڈرز کے ترجمان کے مطابق کے پی پولیس ذرائع اس بات کو تسلیم کر تے ہیں کہ گرفتاری غلط ہوئی ۔ جبکہ عبدالباسط نامی شخص سے کبھی سیف الرحمان خان کا کوئی واسطہ ہی نہ رہا۔ بلال نامی شخص نے پلازہ کی وصول شدہ رقم ہڑپ کر نے کے لیے یہ سازش کی۔انہوں نے کہا کہ کاروباری معاملے کو نوسر باز گروہ نے غلط رنگ دینے کی کوشش کی ہے جس میں وہ ناکام ہونگے۔ حال ہی میں ممبر پنجاب اسمبلی عمار صدیق کے پاس دونوں فریقین کا جرگہ ہوا۔جرگہ کے فیصلہ کو بھی بلال نے پس پشت ڈال دیا ۔ایک منظم سازش کے تحت عطاری بلڈرز کی ساکھ کو متاثر کرنے کیلئے یہ سارا ڈرامہ رچایا گیا ہے جلد دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا ۔ادھر ذرائع کے مطابق حقائق منظر عام پر آ نے کے بعد ممبر قومی اسمبلی علی خان جدون کا آ ئی جی کے پی سے رابطہ ہوا ہے اور آئی جی کے پی نے شفاف اور غیر جانبدارانہ تحقیقات کے احکامات جاری کر دیے ہیں ،دوسری جانب وفاقی وزیر سول ایوی ایشن حاجی غلام سرور خان نے بھی کے پی پولیس واقعہ کی رپورٹ طلب کر لی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں