16

سیاہ فام شخص کی موت کا مذاق اڑانے پر 3 برطانوی نوجوان گرفتار

لندن(سی این پی) امریکا میں پولیس اہلکار کے ہاتھوں ہلاک ہونے والے سیاہ فام شخص جارج فلائیڈ کی موت کا مذاق اڑانے پر 3 برطانوی نوجوانوں کو گرفتار کرلیا گیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق اسنیپ چیٹ ویڈیو میں امریکی سیاہ فام شخص جارج فلائیڈ کی موت کا مذاق اڑانے پر تین برطانوی نوجوانوں کو گرفتار کرلیا گیا۔جارج فلائیڈ کی موت کے بعد امریکا میں مظاہرے جاری ہیں تاہم ان تینوں نوجوانوں نے مذاق اڑانے والی اسنیپ چیٹ ویڈیو کو پچھلے ہفتے شائع کیا، ویڈیو تیزی سے وائرل ہوئی تو وہ اپنی سوشل میڈیا پروفائل بند کرنے پر مجبور ہوگئے۔رپورٹ کے مطابق ویڈیو وائرل ہونے کے بعد تینوں نوجوانوں کو جان سے مارنے کی دھمکیاں دی گئیں اور خیال کیا جارہا ہے کہ وہ پولیس کی حراست میں ہیں تاہم نارتھمبریہ پولیس نے اس کی تصدیق نہیں کی ہے۔ایک پولیس ترجمان نے انکشاف کیا ہے کہ تینوں نوجوانوں کو گرفتار کیا گیا تھا بعدازاں انہیں ضمانت پر رہا کردیا گیا ہے، نوجوانوں کا یہ اقدام نفرت انگیز جرم کے زمرے میں آتا ہے۔پولیس ترجمان کا کہنا ہے کہ تینوں نوجوانوں کے خلاف مزید تحقیقات جاری ہیں۔واضح رہے کہ امریکا میں ایک پولیس اہلکار کے ہاتھوں سیاہ فام شخصجارج فلائیڈ کی موت پر ہونے والے پرتشدد مظاہروں کے بعد 16 ریاستوں کے 25 شہروں میں کرفیو نافذ کردیا گیا ہے۔خیال رہے کہ کچھ روز قبل امریکی ریاست منی سوٹا میں پولیس افسر ڈیرک چون کے تشدد کے باعث سیاہ فام امریکی شخص جارج فلائیڈ ہلاک ہوگیا تھا، پولیس افسر متاثرہ شخص کی گردن پر کافی دیر تک گھٹنا رکھے بیٹھا رہا جو اس کی موت کا باعث بنا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں